Friday, 19 April 2024, 11:37:41 pm
دس مارچ کو نادا کا یوم تاسیس منایا گیا
March 10, 2024

نادرا کے تبدیلی کے سفر کا جشن10  مارچ کو نادا کا یوم تاسیس منایا گیا۔

تبدیلی کے اس سفر کا آغاز 10 مارچ 2000 کو نادرا نے میجر جنرل زاہد احسان کی وژنری قیادت میں کیا۔

نادرا کا مشن ہمیشہ سے محفوظ اور قابل تصدیق شناختی نظام اور مربوط ڈیٹا بیس کے ذریعے پاکستان کے شہریوں اور ریاست کو بااختیار بنانا رہا ہے۔

نادرا اپنے مشن کے مطابق سرکاری اور نجی خدمات اور سہولیات تک جامع، مساوی اور مجاز رسائی کی سہولت فراہم کرتا ہے۔

کئی سالوں سے، نادرا اندرون اور بیرون ملک سستی، موثر اور قابل رسائی شناختی حل فراہم کرنے میں سب سے آگے رہا ہے۔

نادرا کی مسلسل کوششوں سے پاکستان میں پہلے کمپیوٹرائزڈ قومی شناختی کارڈ کا اجراء ممکن ہوا۔

جنوبی ایشیا میں ایک اہم ترین بین الاقوامی شراکت داری قائم کی گئی جو ہماری تکنیکی صلاحیتوں کی عکاسی کرتی ہے۔

نادرا اپنے آٹھ علاقائی ہیڈ آفسز اور 222 موبائل رجسٹریشن وینز کے ساتھ ملک بھر میں 837 نادرا رجسٹریشن سینٹرز کے ایک وسیع نیٹ ورک کے ذریعے کام کرتا ہے۔

بیرون ملک مقیم پاکستانیوں کو مدد فراہم کرنے کی اہمیت کو اجاگر کرتے ہوئے، نادرا نے دنیا کے مختلف حصوں میں 10 مراکز قائم کیے۔

نادرا کے جدید اور صارف دوست آن لائن پلیٹ فارمز بھی قابل فخر ہیں، جن میں جدید ترین پاک شناختی ویب پورٹل اور موبائل ایپلیکیشن شامل ہیں۔

سال 2023 کے دوران، نادرا نے اپنے NRCs نیٹ ورک کے ساتھ ساتھ آن لائن آپریشنز کے ذریعے 29.9 ملین شناختی دستاویزات جاری کیں

اسی مدت کے دوران 6.76 ملین چائلڈ رجسٹریشن سرٹیفکیٹ (CRCs)، 0.65 ملین Smart NICOPs اور 0.29 ملین Smart POCs جاری کیے گئے

اپنی بنیاد کے 24 سال مکمل ہونے پر، نادرا دنیا کے تیسرے سب سے بڑے آبادیاتی طبقے کی خدمت میں مصروف عمل ہے۔

نادرا نہ صرف پاکستان بلکہ اپنے شراکت دار ممالک میں بھی ایک تسلیم شدہ منفرد ذاتی شناخت کی فراہمی کو یقینی بناتا ہے۔

حال ہی میں، نادرا نے شناخت کے مختلف اقدامات پر نائیجیریا، صومالیہ اور کینیا کے ساتھ اپنے تعاون کو بڑھایا۔

ڈیزاسٹر ریلیف اور سماجی تحفظ میں نادرا کا کردار اسکی کارروائیوں کا خاصہ رہا ہے۔

ضرورت مندوں کو بروقت اور موثر مدد فراہم کرنے کے لیے نادرا کے ڈیٹا اور ٹیکنالوجیز کے جدید استعمال کو عالمی سطح پر پذیرائی ملی ہے۔

بگ ڈیٹا جیسی اختراعات سے فائدہ اٹھاتے ہوئے، نادرا نے قومی سماجی و اقتصادی رجسٹری (NSER) کے قیام میں سہولت فراہم کی۔

ڈیجیٹل تبدیلی کے اقدامات کے ذریعے، نادرا نے پاکستان کی ڈیجیٹلائزیشن میں ایک اہم کردار ادا کیا ہے، جس سے ایک جامع ڈیجیٹل معیشت کی طرف منتقلی کو آسان بنایا گیا۔

کسٹمر فوکس، آپٹمائزڈ ڈیلیوری، ڈیٹا پرائیویسی، اور سیکیورٹی کے لیے نادرا کی وابستگی غیر متزلزل رہی ہے۔

پاکستان کے سب سے بڑے آجروں میں سے ایک کے طور پر، نادرا کے پاس 23,000 افراد سے زیادہ افرادی قوت ہے، جو کیریئر کی ترقی کو فروغ دینے اور اپنی ٹیم کے اراکین کی صلاحیت کو بڑھانے کے لیے اپنی لگن کا مظاہرہ کرتی ہے۔

شناخت تک رسائی کو یقینی بنانے اور ضروری خدمات کی فراہمی کو آسان بنانے کے لیے نادرا کی لگن پہلے سے کہیں زیادہ مضبوط ہورہی ہے۔

نادرا اپنے تکنیکی نظام کو بڑھانے اور جدت اور عمدگی کے اس سفر کو جاری رکھنے کے لیے پرعزم ہے۔

اس یوم تاسیس پر نادرا نے پاکستان کی ترقی میں اہم کردار ادا کرنے کے اپنے مشن کے لیے اپنے عزم کا اعادہ کیا۔