Monday, 27 May 2024, 01:16:44 am
شام اور پاکستان کے درمیان دیرینہ برادرانہ تعلقات ہیں،خالد مقبول صدیقی
May 03, 2024

شام کے نائب وزیر تعلیم رامی الدھولی کی قیادت میں ایک اعلی سطحی شامی وفد نے آج کو وفاقی وزیر تعلیم اور پیشہ ورانہ تربیت ڈاکٹر خالد مقبول صدیقی سے ملاقات کی۔

وفاقی وزیر تعلیم و پیشہ ورانہ تربیت ڈاکٹر خالد مقبول صدیقی نے کہا کہ شام اور پاکستان کے درمیان دیرینہ برادرانہ تعلقات ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان شام کو اپنے تعلیمی نظام کو بہتر بنانے کے لیے ہر ممکن مدد فراہم کرے گا۔ انہوں نے کہا کہ باہمی تعاون اور مہارت کے تبادلے سے ہی دونوں ممالک تعلیم کے شعبے میں آگے بڑھ سکتے ہیں۔ انہوں نے تکنیکی مہارتوں کی ترقی اور توسیع کی ضرورت پر زور دیا اور کہا کہ پاکستان کا مقصد لاکھوں نوجوانوں کو انفارمیشن اینڈ ٹیکنالوجی کورسز کی پیشگی سطح پر تربیت دینا ہے۔

سیکرٹری تعلیم محی الدین احمد وانی نے وفد کو تعلیم کے شعبے میں جدید ترین طریقوں کو اپنانے کے لیے حکومت کے مختلف اقدامات کے بارے میں آگاہ کیا۔ احمد وانی نے موجودہ حکومت کی طرف سے اسکول سے باہر بچوں کی تعداد کو کم کرنے اور تعلیم تک رسائی اور معیار کو بڑھانے کے لیے شروع کیے گئے متعدد پروگراموں کی وضاحت کی۔ انہوں نے کہا کہ دارالحکومت، آزاد جموں و کشمیر اور جی بی میں شروع کیے گئے سکول میلز پروگرام کے شاندار نتائج سامنے آئے ہیں اور انہیں امید ہے کہ ایسے تخلیقی اقدامات کے ذریعے بچوں کے ساتھ ساتھ ان کے والدین کو بھی اپنے بچوں کی تعلیم جاری رکھنے کی طرف راغب کیا جا سکتا ہے۔

شام کے نائب وزیر تعلیم رامی الدھولی نے کہا کہ پاکستان اور شام کے درمیان 1971 سے تعلیمی تبادلے کے حوالے سے متعدد ایم او یوز ہوئے ہیں اور انہوں نے کہا کہ اس طرح کے تبادلے میں اضافہ ہونا چاہیے۔ انہوں نے پاکستانی حکومت کی جانب سے سکولوں سے باہر بچوں کی تعداد کو کم کرنے کی کوششوں کو سراہتے ہوئے کہا کہ فنی تعلیم ملکی معیشت کو بہتر بنانے میں کلیدی کردار ادا کر سکتی ہے۔